لبیک اللھم لبیک کی صداؤں میں مناسک حج کی محدود پیمانے پر ادائیگی کا آغاز ہو گیا

0
90

مکہ مکرمہ(مدار نیوز ٹی وی) لبیک اللھم لبیک کی صداؤں میں مناسک حج کی محدود پیمانے پر ادائیگی کا آغاز ہو گیا،عازمین حج نے قرنطینہ ختم کر کے احرام کی حالت میں طواف کیا۔ مسجد الحرام میں سماجی فاصلہ برقرار رکھنے کے لیے مخصوص نشان لگا دیئے گئے۔ عازمین حج منیٰ میں خصوصی کمپلیکس میں قیام کریں گے جہاں وہ ذکر و اذکار اور عبادات میں مصروف رہیں گے۔
اس حوالے سے سوشل میڈیا پر ویڈیوز بھی وائرل ہو رہی ہیں جن میں عازمین حج کو خانہ کعبہ کا طواف کرتے دیکھا گیا،ویڈیو میں دیکھا جا سکتا ہے کہ تمام عازمین حج ایک قطار میں ہیں جب کہ آپس میں فاصلہ بھی قائم رکھا ہوا ہے۔
۔عازمین جمعرات کی صبح نماز فجر کے بعد میدان عرفات روانہ ہوں گے جہاں حج کا رکن اعظم وقوف عرفہ ادا کرینگے۔
یومِ عرفہ کے لیے مسجد نمرہ میں بھی عازمین کے لیے مخصوص نشان لگا دیئے گئے ہیں۔
دن بھر عرفات میں قیام اور مغرب کی اذان کے بعد حجاج مزدلفہ روانہ ہو جائیں گے جہاں نماز مغرب اور عشاء ملا کر ادا کی جائے گی، رات بھر مزدلفہ میں کھلے میدان اور پہاڑوں پر قیام ہو گا۔ اللہ کے مہمان 10 ذی الحج کو فجر کی نماز کے بعد منیٰ روانہ ہوں گے۔
جہاں وہ شیطان کو کنکریاں مارنے کے بعد قربانی کریں گے اور سر منڈوا کر احرام کھول دیں گے، پھر طواف زیارت ہو گا۔واضح رہے کہ اس بار حج کی موقع پر عرفات میں امامت اور خطبہ کی سعادت مشہور سعودی عالم و مفتی الشیخ عبداللہ بن سلیمان المنیع کے حصے آئے گی۔ سعودی فرمانروا خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود نے شاہی دیوان کے مشیر اور سپریم علماء کونسل کے رکن الشیخ عبداللہ بن سلیمان المنیع کو امسال یوم عرفات کے موقع پر خطبہ حج کا امام مقرر کیا ہے۔
اس امر کی تصدیق مسجد الحرام اور مسجد نبوی کے نگران ادارے نے منگل کے روزکی ہے۔ یوم عرفات کے موقع پر دیا جانے والے خطبہ مسلمانوں کی مذہبی اور سماجی معاملات میں رہنمائی کے حوالے سے بہت اہم ہوتا ہے۔شیخ عبداللہ المنیع اپنے فتاویٰ کے باعث سعودی عرب میں بہت قدر و احترام کی نگاہ سے دیکھے جاتے ہیں۔

LEAVE A REPLY

Please enter your comment!
Please enter your name here